حضرت ابو دجانہ رضی اللہ عنہ 1000 کے برابر

حضرت ابو دجانہ رضی اللہ عنہ
Spread the love

حضرت ابو دجانہ رضی اللہ عنہ ایک صحابی ہے..

کون حضرت ابو دجانہ؟؟ 

اَلّسَبِقُون الولون مِنَ المہاجرین والانصَار ۔الخ..!

پہلی صف کے صحابہؓ

کون حضرت ابو دجانہ؟؟

جب آپ علیہ السلام حج پر گئے تو اپنی جگہ ابو دجانہ کو مدینہ میں اپنا نائب بنایا کہ ابو دجانہ مدینہ میں میری جگہ امیر ہے وہ ابو دجانہ۔۔!

کون حضرت ابو دجانہ؟؟

جو جنک بدر سے لیکر آخری حج تک ہر سفر میں شریک ہے وہ ابو دجانہ۔۔

انکی ایک بات بتانا چاہتا ہوں لیکن اس بات سے پہلے تھوڑی سی انکی ہسٹری بتانا چاہتا ہوں تاکہ بات میں وزن پیدا ہوسکے ۔

یہ بہت بڑے جنجگنو صحابی گزرے ہیں یہ بدر سے لے کر آخری حج تک ہر سفر میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ شریک رہے ہیں ایسے صحابہ چند سو ہی بے جو ہر سفر میں نبی علیہ السلام کے ساتھ رہے ہیں..

انکا ایک واقعہ بہت مشہور ہے

تاریخ میں لکھا آتا ہے کہ یہ ایک آدمی ہزار کے برابر شمار ہوتے تھے ایسے صحابہ چند ہے جو ایک ہزار کے برابر شمار ہوتے تھے جب یہ میدان میں اترتے تھے تو یہ ایک ہزار کے برابر شمار ہوتے تھے کہ یہ ایک تلوار نہیں ایک ہزار تلوار ہے

حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے حضرت عمر ابن عاص رضی اللہ عنہ کے مدد کے لئے جو لشکر بھیجا وہ چار ہزار کا لشکر تھا حضرت عمر رضی اللہ عنہ نے عمر ابن عاص رضی اللہ عنہ کو لکھا کہ ویسے تو میں چار ہزار  بھیج رہا ہوں لیکن یہ اصل میں آٹھ ہزار ہے چار ہزار تم پہلے ہو اور بارہ ہزار کو شکست نہیں ہوتی کمی کی وجہ سے ان میں ایک عبادہ بن صامت، مسلمہ بن مخلد، زبیر بن عوام، اور ابو دجانہ رضی اللہ تعالٰی عنہم اجمعین تھے…

اچھی اچھی کہانیاں مزید پڑھیں۔

اسلام کے بارے میں پڑھیں

70 سچے اسلامی وقعات کتاب

حضرت ابو دجانہ رضی اللہ عنہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *