الفاظ کا چناؤ

الفاظ کا چناؤ
Spread the love

کسی بادشاہ نے خواب دیکھاکہ اس کے سارے دانت ٹوٹ کر گر پڑے ہیں۔ بادشاہ نے خوابوں کی تعبیر بتانے والے ایک شخص کو بلوا کر اسے اپنا خواب سنایا۔ تعبیر بتانے والے نے خواب سن کر بادشاہ سے پوچھا: بادشاہ سلامت! کیا آپ کو یقین ہے یہی خواب دیکھا ہے؟

بادشاہ نے جواب دیا: ہاں میں نے یہی خواب دیکھا ہے۔

تعبیر بتانے والے نے لاحول ولا قوۃ الا باللہ پڑھا اور بادشاہ سے کہا: بادشاہ سلامت! اس کی تعبیر یہ بنتی ہے کہ آپ کے سارے گھر والے آپ کے سامنے مریں گے۔

بادشاہ کا چہرہ غصے کی شدت سے لال ہوگیا۔ دربانوں کو حکم دیا کے اس کو فی الفور جیل میں ڈال دیں اور کسی دوسرے تعبیر بتانے والے کا بندوبست کریں۔

دوسرے میں آکر بادشاہ کا خواب سنا اور کچھ ویسا ہی جواب دیا اور بادشاہ نے اسے بھی جیل میں ڈلوا دیا۔

تیسرے تعبیر بتانے والے کو بلوایا گیا۔ بادشاہ نے اسے اپنا خواب سنا کر تعبیر جاننا چاہی۔ اس نے بادشاہ سے پوچھا: بادشاہ سلامت! کیا آپ کو یقین ہےکہ کیا آپ نے یہی خواب دیکھا ہے؟

بادشاہ نے کہا: ہاں مجھے یقین ہے میں نے یہی خواب دیکھا ہے۔

یہ بھی پڑھیے: شہزادوں کی عید

: اس نے کہا تو پھر آپ کو مبارک ہو۔

بادشاہ نے حیرت کے ساتھ پوچھا: کس بات کی مبارک؟

اس نے جواب دیا: بادشاہ سلامت! اس خواب کی تعبیر یہ بنتی ہے کیا آپ اپنے گھر والوں میں سب سے لمبی عمر پائیں گے۔

بادشاہ نے مزید تعجب کے ساتھ اس سے پوچھا: کیا تمہیں یقین ہے کہ اس خاک کی یہی تعبیر بنتی ہے؟

اس نے جواب دیا: جی بادشاہ سلامت! اسحاق کی بالکل یہی تعبیر بنتی ہے۔ بادشاہ نے خوش ہو کر اس کو انعام و اکرام دے کر رخصت کیا۔

اچھے الفاظ کا چناؤ

تینوں نے خواب کی تعبیر درست بتائی، لیکن تیسرے نے الفاظ کا چناؤ تعبیر ایسی اختیار کی کے بادشاہ انعام و اکرام کرنے پر مجبور ہوگیا۔ ہمیں بھی چاہیے کے اپنی گفتگو میں اچھے الفاظ کا چناؤ کریں، بس اوقات اچھی تعبیر ہمارے مسائل حل کرتی ہے۔

مزید سبق آموز اور تربیتی کہانیاں پڑھیں۔

گفتگو کے دوران اچھے الفاظ کا چناؤ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *