اذان : بچوں کے لیے لاک ڈاؤن کے دوران 1 سبق

اذان : بچوں کے لیے لاک ڈاؤن کے دوران 1 سبق
Spread the love

اذان ایک بلاوا بچوں کو کیسے سمجھائیں

آج سبق کے لیے بچوں کو اپنے پاس بٹھائیں اور ایک بچے کو نہ بلائیں۔

پھر جو آپ کے پاس بیٹھے ہیں ان میں سے ایک بچے کو کہیں اسے بلاؤ کہ مما/بابا بلارہے ہیں اب بچہ دیر سے آئے گا یا فوراً آئے گا یہ پھر نہیں آئے گا۔

بچوں کو سمجھائیں۔

دیکھیں میرے لیے آپ نے بھائی/آپی کو بلایا تو وہ فوراً کام چھوڑ کر آگیا تو دیکھو میں کتنی خوش ہوئی۔

یا

دیکھیں میرے لیے آپ نے بلایا لیکن وہ نہیں آیا تو مجھے دکھ ہوا ناں یا لیٹ آیا تو مجھے لگا اس نے مجھے غیر اہم سمجھا ہے تو مجھے تکلیف ہوئی۔

اب دیکھو اللہ جی کی طرف ہمیں بلانے کے لیے مؤذن مسجد میں پانچ مرتبہ بلاتا ہے۔

اگر ہم سستی کریں،بالکل ہی نہ جائیں تو اللہ جی ناراض ہوجائیں گے ناں ہم سے؟

اور اللہ پاک ہمیں اپنی ناراضگی سے بچائیں معلوم ہے نا کہ اللہ جی کی ناراضگی کتنی سخت ہے؟

بچے کو آپ حضرت آدم کی کہانی کا حوالہ دے سکتے ہیں جس میں اللہ جی شیطان سے ناراض ہوئے وغیرہ وغیرہ۔

اب دیکھتے ہیں اذان کسے کہتے ہیں۔

اذان نماز سے پہلے بلند آواز کے ساتھ مخصوص الفاظ سے نماز کی طرف بلانے کو اذان کہتے ہیں۔

اذان کے الفاظ یہ ہیں۔

اللہ اکبر  اللہ اکبر

اللہ اکبر  اللہ اکبر

اشھدان لا الہ الا اللہ

اشھدان لاالہ الااللہ

اشھد ان محمدارسول اللہ

اشھدان محمدارسول اللہ

حی علی الصلوۃ   حی علی الصلوۃ

حی علی الفلاح   حی علی الفلاح

اللہ اکبر   اللہ اکبر

لاالہ الا اللہ

صبح کی اذان میں ”حی علی الفلاح“ کے بعد ”الصلوۃ خیر من النوم“ بھی دو مرتبہ کہنا چاہیے۔

جماعت کی نماز سے پہلے جو کلمات کہے جاتے ہیں انہیں اقامت کہتے ہیں۔

اقامت میں ”حی علی الفلاح“کے بعد دو مرتبہ”قد قامت الصلاۃ“ بھی کہیں۔

بچے سے پوچھیں آپ کسی کو بلائیں اور وہ نہ آئے تو آپ کو کیسا محسوس ہوگا۔

آپ کسی کو دعوت پر بلاؤ وہ نہ آئے تو آپ کو کیسا محسوس ہوگا۔

اس طرح بچے کو اذان کی اہمیت معلوم ہوگی۔

فیملی کے بارے میں مزید پڑھیں

اچھی اچھی کہانیاں مزید پڑھیں۔

بچوں کے بارے میں مزید پڑھیں

اسلام کے بارے میں پڑھیں

ERDC – Educational Resource Development Centre

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *