5G کرونا وائرس اور نینو چپ ایجنڈا

5Gکرونا وائرس اور نینو چپ ایجنڈا
Spread the love

کرونا وائرس اور نینو چپ ایجنڈا (ایک بہت اہم تحریر)

اکانومسٹ میگزین اپریل 2020 شمارے میں 5 خفیہ پلانز کا اعلان کیا گیا ہے۔ اس تحریر میں پانچوں صیہونی پلانز کو ڈی کوڈ کیا جائے گا۔

نمبر 1 : Everything is Under Control

اس کے معنی ہیں “ہر چیز طے شدہ منصوبے کے مطابق ہمارے کنٹرول میں ہے”۔ ایک طرف پوری دنیا کرونا سے ڈر کر گھروں میں بیٹھی ہوئی ہے، حکومتیں سکڑ کر دارالحکومتوں تک محدود ہو گئیں، عوام کو دو وقت کی روٹی کے لالے پڑ گئے، کئی ممالک کو اپنی حیثیت برقرار رکھنے کے خطرے کا سامنا ہے لیکن آپ دیکھیں وہیں صیہونی میگزین فخریہ کرتا ہے کہ Everything is Under Control.

یہ بات عقلمندوں کے کان کھڑے کرنے کے لیے کافی ہے۔ کرونا وائرس کے ذریعے جس جال کو بچھایا گیا ہے وہ بالکل توقعات کے عین مطابق پورا ہو رہا ہے جب ہی صیہونی میگیزین فخریہ کہتا ہے کہ سب کچھ طے شدہ منصوبے کے مطابق ان کے کنٹرول میں ہے۔

نمبر 2 : Big Government

اس سے مراد عالمی حکومت ہے۔ اس بڑی حکومت کو صیہونی دانا بزرگوں کی خفیہ دستاویزات دی الیومیناٹی پروٹوکولز میں “سپر گورنمنٹ” کے نام سے بار بار بیان کیا گیا ہے۔ اس کی تفصیلات بھی بیان کی گئی ہیں جن کے مطابق پوری دنیا کی ایک ہی “عالمی سپر گورنمنٹ” بنائی جائے گی جس کا حکمران فرعون و نمرود کی طرح پوری دنیا پر اپنے مسیحا کے ذریعے حکمرانی کرے گا

یہاں یہ بتانا بھی ضروری سمجھوں گا کہ ان کی عالمی حکومت بن چکی ہے۔ یہ اقوام متحدہ ہے۔ صرف اس کا اعلان نہیں کیا گیا۔ ان کا منصوبہ یہ ہے کہ مستقبل میں کسی بھی وقت دنیا میں کرائسز پیدا کر کے (جیسے اس وقت ہیں) اقوام متحدہ کو ایک عالمی سپر حکومت میں تبدیل کر دیا جائے گا۔ اقوام متحدہ کے جو بھی ادارے ہوں گے انہیں وزارتوں میں تبدیل کر کے اسے عالمی سپر گورنمنٹ قرار دے دیا جائے گا

اس حکومت کی باگ ڈور ایسے یہودی النسل شخص کے ہاتھ دی جائے گی جو دجال کے لیے ہیکل سلیمانی تعمیر کرے گا اور یہودیوں کو چھوڑ کر باقی پوری دنیا کی اقوام کو اپنا غلام بنا لے گا۔

اب موجودہ دور میں آ جائیں، برطانوی وزیراعظم سے لے کر بہت سے عالمی رہنماؤں نے اب کھل کر کہنا شروع کر دیا ہے کہ ایک عالمی حکومت بننی چاہیے۔ یہ سب اسی عالمی سپر گورنمںٹ بنانے کی راہ ہموار کر رہے ہیں۔ اگر اقوام متحدہ کا کوئی ایسا حکمران بن جائے تو ویکسین دینے کا اعلان کر دے تو دنیا کا کونسا ملک ہوگا جو اس کی حکمرانی تسلیم نہ کرے گا؟؟

نمبر 3 : Liberty

لبرٹی کا مطلب ہے “آزادی”۔ یہاں آزادی سے مراد دنیا کو جو آزادی حاصل ہے اس کا کنٹرول اس “خفیہ ہاتھ” کے پاس ہے جو اکانومنسٹ نے بطور علامت اپنے کور فوٹو پر نمایاں کیا ہے۔ یہ وہ “خفیہ ہاتھ” ہے جو پردے میں رہ کر پوری دنیا کو چلاتا ہے۔ آپ اس ہاتھ کو صیہونیوں کے 13 خفیہ خاندان سمجھیں جو پوری دنیا کی معیشت، زراعت، میڈیا، حکومت الغرض ہر چیز کی باگ ڈور سنبھالتے ہیں۔

ورلڈ بینک ہو یا آئی ایم ایف یہ تمام ادارے ان کے فنڈز سے چلتے ہیں، اقوام متحدہ کا خرچہ پانی یہی دیتے ہیں، اقوام متحدہ کے تمام بڑے اداروں کے سربراہان ان کے اپنے لوگ اور یہودی النسل ہیں۔

اقوام متحدہ کو آپ ان کے گھر کے لونڈی سمجھیں۔ آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک جیسے ادارے درحقیقت اقوام متحدہ کے ادارے ہی ہیں۔ آج یہ 13 یہودی خاندان اپنے مسیحا کے انتظار میں ہیں جس کے بارے حال ہی میں اسرا’ئیلی یہودی ربی اور یہاں تک کہ اسرا’ئیلی سرکاری وزراء بھی اعلان کر چکے ہیں کہ مسیحا اسی سال آ رہا ہے۔ ایک نے یہ بھی کہہ دیا کہ وہ مسیحا سے ملاقات بھی کر چکا ہے اور بتا دیا کہ مسیحا اسی سال کسی بھی وقت آ جائے گا۔ یعنی یہ لوگ جانتے ہیں کہ مسیحا کون ہے لیکن اس کا فی الحال اعلان نہیں کر رہے۔

نمبر 4 : وائرس

یعنی کہ “کرونا وائرس” کا کنٹرول بھی اسی “خفیہ ہاتھ” کے پاس ہے۔ جب پوری دنیا وائرس کے خوف سے کانپ رہی ہے تو یہ لوگ کون ہیں جو کہتے ہیں کہ وائرس ان کے قابو میں ہے؟

یا ہم یوں کہہ سکتے ہیں کہ وائرس کے ذریعے انہوں نے پوری دنیا کو اپنے قابو میں کر رکھا ہے۔

اسرائیلی وزیر دفاع خود کہتے ہیں کہ ہمیں وائرس سے کوئی پریشانی نہیں ہے کیونکہ جب 70 فیصد آبادی کو کرونا متاثر کر لے گا تو پھر ازخود ختم ہو جائے گا۔ یعنی وہ پہلے سے جانتے ہیں کہ اتنے فیصد آبادی متاثر ہو گی لیکن ساتھ ہی کسی قسم کی انہیں پریشانی بھی نہیں ہے۔ یہ اس بات کی علامت ہے کہ پردے کے پیچھے وہ بہت کچھ جانتے ہیں جب ہی بالکل مطمئن ہیں، اسی لیے نہ لاک ڈاؤن کرتے ہیں نہ ہی انہیں کوئی پریشانی ہے بلکہ اعلانیہ کہتے ہیں کہ وائرس ان کے قابو میں ہے۔

نمبر 5 : The Year Without winter

اس کو اگر ڈی کوڈ کریں تو اس کا مطلب ہو گا کہ اس سال دنیا کو موسم سرما گھروں میں قید رہ کر گزارنا پڑ سکتا ہے۔ یاد رہے اس وقت سال کا چوتھا مہینہ اپریل چل رہا ہے لیکن انہوں نے اعلان کر دیا ہے کہ اس سال موسم سرما نہیں ہو گا یعنی دنیا موسم سرما کے مزے اس سال نہیں لے سکے گی۔

یہاں یہ بتانا ضروری سمجھوں گا کہ کرونا وائرس پر بنی فلم Contagion میں بھی ایک ڈائیلاگ بالکل ایسا ہی سننے کو ملتا ہے۔ ایک لڑکی ویکسین کی عدم دستیابی پر اکتاتے ہوئی کہتی ہے کہ یعنی اس سال میرا موسم سرما برباد ہو جائے گا کیونکہ مجھے گھر میں قید رہ کر گزارنا ہو گا۔

اکانومسٹ میگزین، کانٹیجئین فلم اور موجودہ صورتحال کا آپس میں بہت گہرا تعلق ہے۔ اگر حالات بالکل اس فلم جیسے ہی چلتے ہیں تو پھر آپ کو وقت سے پہلے ہوشیار رہ کر تیاری کرنی ہو گی۔ اگر لاک ڈاؤن مزید چند ماہ چلتا ہے تو ہر ملک کے پاس کھانے پینے کی اشیاء کی قلت ہو جائے گی، ڈاکے پڑنا شروع ہو جائیں گے، اس دفعہ لوگ پیسے نہیں بلکہ روٹی اور راشن چھیننے کے لیے ایک دوسرے پر بندوق چلائیں گے۔ اس فلم میں بالکل ایسے ہی مناظر دیکھنے کو ملتے ہیں۔

اسکے علاوہ ۔ ۔ ۔۔

کچھ اور عوامل بھی ہیں جنہیں ابھی تک اکانومسٹ میگزین نے نمایاں نہیں کیا۔ شاید اگلے مہینے کے شمارے میں ظاہر کر دیں۔ میں آپ کو پہلے ہی آگاہ کر دیتا ہوں۔

پہلا پروجیکٹ  5Gہے :

سب سے پہلے 5G انسٹالیشن ہے جو لاک ڈاؤن کے دوران دنیا کے بیشتر ممالک میں چپکے سے کی جا رہی ہے۔ عالمی میڈیا کو اس کی رپورٹنگ سے روکا گیا ہے۔ میڈٰیا پر آپ کو 5G کے متعلق کوئی خبر نہیں ملے گی۔ لنڈن میں مکمل لاک ڈاؤن ہے لیکن وہاں 5 جی انسٹالیشن کا عملہ پھر بھی دن رات پولز پر ٹاورز نصب کرنے میں مصروف ہے۔ پاکستان میں ٹیلی نار اور زونگ کمپنیوں نے اشتہارات کے زریعے 5 جی کی پروموشن شروع کر دی ہے۔

آخر یہ 5G کیا بلا ہے؟

یہ آپ کے لیے سمجھنا بہت ضروری ہے۔ یہ دراصل انٹرنیٹ اسپیڈ کی تیز ترین رفتار ہے جو اگر کسی علاقے میں انسٹال کر دی جائے تو اس پورے علاقے کو ایک “سپر کمپیوٹر” کے ذریعے ہر وقت وڈیو پر دیکھا جا سکے گا۔ علاقے کا کوئی فرد ایسا نہیں بچے گا جس کی جاسوسی ممکن نہ ہو۔ موبائل سے لیکر ٹی وی، فرج، آٹو پارٹس اور گھر کی تمام اشیاء میں نصب چھوٹے خفیہ کیمروں کے ذریعے چوبیس گھنٹے ہر فرد کی جاسوسی ممکن ہو جائے گی۔

ملٹری سطح پر یہ کام پہلے ہی دنیا کی بڑی افواج کرتی رہی ہیں لیکن عوامی سطح پر اسے لانے کا بہت زیادہ سائنسی نقصان بھی ہے۔ کیونکہ اس ٹیکنالوجی کی شعاعیں انسانی دماغ کیلئے انتہائی خطرناک ہیں۔

ماہرین کے مطابق 5G سگنلز میں رہنے والا انسان ایسا ہو گا جیسے اس کا دماغ مائیکرو اوون میں پڑا ہوا ہو۔ یہ انسان کو مختلف ذہنی بیماریوں کا شکار کر دے گی لیکن خفیہ ہاتھ کو اس کی پرواہ نہیں کہ انسانوں کے دماغ پر کیا بیتتی ہے، انہیں صرف پوری دنیا کو ڈجیٹلائیز کرنا ہے اور اس مقصد کیلیے لاکھوں انسانوں کو مارنا پڑتا تو وہ اس سے بھی دریغ نہیں کریں گے۔

دوسرا پروجیکٹ Nano Chip بزریعہ ویکسین نینو چپ ایجنڈا:

حال ہی میں ایک آرٹیکل پڑھا جس میں بل گیٹس نے 1 بلین ڈالرز کی سرمایہ کاری کرنے کا اعلان کیا۔ یہ اعلان پوری دنیا کو ڈجیٹلائیز کرنے کے متعلق تھا۔ سوال یہ ہے کہ پوری دنیا کو ڈجیٹلائز کیسے کیا جائے گا؟

اسکا جواب ہے 5G اور نینو چپ ایجنڈا Nano chip سے۔

دیکھیں 5G کے ٹاورز بظاہر تو آپ کو انٹرنیٹ کی تیز سپیڈ دینے کیلئے ہوں گے لیکن ان کا اصل خفیہ مقصد انسانوں میں لگی نینو چپ (بہت زیادہ چھوٹی چپ) میں جمع ہونے والا ڈیٹا (یعنی آپ کی دماغی سوچ) کو کسی خفیہ جگہ جمع کرنا ہو گا۔ وہ “خفیہ ہاتھ”جسے آپ اکانومسٹ میگزین پر دیکھ سکتے ہیں پوری دنیا کے انسانوں کے دماغوں میں پیدا ہونے والی سوچ کو کسی نامعلوم جگہ پر اپنے “سپر کمپیوٹر” کے ذریعے دیکھے گا۔

میں وثوق سے کہہ دیتا ہوں وہ یہودیوں کا مسیحا یعنی دجال ہو گا جو “اقوام متحدہ کی سپر گورنمنٹ” سنبھالتے ہی ان ٹیکنالوجیز سے انسانوں کے دماغ بھی پڑھ لے گا بلکہ کسی کے بولنے سے پہلے اس کے خیالات بھی جان لے گا۔

بلکل ایسی ہی ایک حدیث بھی ملتی ہے کہ دجال ایک جگہ سے گزرے گا جہاں کسی شخص کے والدین فوت ہو گئے ہوں گے، وہ شخص سوچ رہا ہو گا کہ کاش میرے والدین دوبارہ زندہ ہو جائیں۔ دجال اس کی یہ سوچ اور خواہش پہچان لے گا اور اس کے بولنے سے پہلے ہی اسکے پاس جا کر اسے کہے گا کہ اگر میں تمہارے والدین کو زندہ کر دوں تو کیا تم مجھے خدا مان لو گے؟ وہ شخص بولے گا ہاں کیوں نہیں۔

پھر دجال اپنے شیاطین کو حکم دے گا۔ وہ اس شخص کے والدین کے مردہ اجسام میں داخل ہو کر زندہ ہو کر کھڑے ہو جائیں گے اور اس شخص کو کہیں گے کہ بیٹا یہ (دجال) تمہارا رب ہے، اس کی بات مان لو، اس کی اطاعت کرو۔

یہاں یہ بھی ثابت ہوتا ہے کہ دجال اور اس کی قوتوں کو شیاطین کی مدد حاصل ہو جائے گی۔ یعنی وہ کوئی ایسی ٹیکنالوجی حاصل کرنے میں بھی کامیاب ہو جائیں گے جس سے دنیا میں موجوہ غیر مرئی مخلوق یعنی “جنات” سے ان کا رابطہ ممکن ہو جائے گا اور اسی کی مدد سے دجال  شیطانوں سے مدد لے گا۔ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا : اللہ روئے زمین کے تمام شیاطین کو دجال کے تابع کر دے گا (تاکہ اس فتنہ عظیم سے دنیا کے آخری بہترین مسلمانوں کی آزمائش کرے)۔ 

اب اس سارے منظرعام کو اگر مختصر بیان کیا جائے تو یہ کچھ ایسا ہوگا کہ؛

“خفیہ ہاتھ” کامیاب ہو رہا ہے، ہر چیز طے شدہ منصوبے کے مطابق ان کے کنٹرول میں ہے۔ کرونا وائرس سے دنیا کو لاک ڈاؤن کروا کے وہ اپنے منصوبے میں کامیاب ہو رہے ہیں، ساتھ ہی انہوں نے چپکے سے 5G انسٹالیشن شروع کر دی ہے اور بل گیٹس نے نینو چپس کی شروعات کیلیے اقوام متحدہ سے 1 بلین ڈالرز کا معاہدہ بھی کر لیا ہے۔ اس معاہدے میں ویکسین بنے گی اور اسی ویکسین کے اندر اتنی چھوٹی نینو چپ ہو گی کہ جو انسان کو خردبین سے ہی نظر آ سکتی ہے۔

وہ دنیا کے ہر انسان کو دی جائے گی۔ Contagion فلم میں جو ویکسین سب کو دی جاتی ہے وہ ناک میں ڈالی جاتی ہے اور ساتھ ہی ایک ڈجیٹل کڑا ہاتھ میں پہنا دیا جاتا ہے جس سے ان کو کسی “خفیہ جگہ” سے مانیٹر کیا جا سکتا ہے۔

اب مجھے پورا یقین ہے بل گیٹس بھی اقوام متحدہ کو چلانے والے “خفیہ ہاتھ” کے ساتھ مل کر ایسی ہی ویکسین بنائے گا جو ناک یا منہ میں ڈالی جائے گی اور اسی کے زریعے نینو چپ بھی ہر انسان کے جسم میں داخل کی جائے گی۔ چونکہ چپ انتہائی چھوٹی ہے اور کسی بھی ویکسین کے ذریعے جسم میں ڈالی جا سکتی ہے لہذا کسی انسان کو پتا ہی نہیں چلے گا کہ وہ چپ زدہ ہو چکا ہے۔

دجال کی دنیا میں خوش آمدید۔ ۔ ۔ ۔ ۔ 

جو پہلے سے اس فتنے سے آگاہ ہو گا وہی اس سے بچ پائے گا۔ جو لاعلم ہوں گے وہ پھنس جائیں گے، بہک جائیں گے، گمراہ ہو جائیں گے، سیلابی پانی میں تنکوں کی طرح بہہ جائیں گے۔

Nanochips and Smart Dust: The Dangerous New Face of the Human Microchipping Agenda

Pakistan Corona Virus Live Cases

The Bio-Nano-Chip

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *