موجودہ مسائل اور وسائل کا جائزہ

مسائل اور وسائل
Spread the love

تحریر: احمد سلیم ابن فاضل

مسائل اور وسائل کا تقابل

فیکٹری میں ایک ملازم تھا. گردن کے مہروں میں درد کی شکایت رہنے لگی. ڈاکٹرز کو دکھاتا رہا. دوائیں کھاتا رہا. مستقل آفاقہ نہ ہوا. ایک روز بڑی تکلیف میں تھا. میں نے کہا آؤ تمہارے معمولات چیک کرتے ہیں. وہ خراد پر کام کرتا تھا. میں نے اس کا کام کرنے کا انداز بغور دیکھا. پھر دوسرے خرادیوں کا مشاہدہ کیا. ان کا موازنہ کیا تو اندازہ یہ ہوا کہ اس کا قد اوسط سے چھوٹا تھا. اسے گھومتے ہوئے پرزے پر نظر رکھنے کیلئے اپنی گردن ایک خاص زاویے پر موڑ کررکھنا پڑتی تھی۔

مستقل اس طرح گردن موڑنے کی وجہ سے گردن میں درد رہنا شروع ہوگیا . تھوڑا سا غور کیا. ایک مناسب اونچائی کا لکڑی کا تخت بنوایا. اس نے اس پر کھڑا ہوکر کام کرنا شروع کیا. گردن موڑے رکھنے کی حاجت ختم ہوگئی. چند دن میں درد جاتا رہا۔

ایک دوست کی بائیں کندھے میں درد رہتا تھا. بہت علاج کیے. آفاقہ نہ ہوا. فروزن شولڈر قرار پایا. انجیکشن لگا کچھ دن ٹھیک رہا پھر وہی درد. ایک پرانی سی جیپ چلاتے تھے. ایک روز درد کی زیادتی وجہ سے جیپ مجھے چلانا پڑی. محسوس ہوا کہ بائیں بازو کو ہلکا سا زور لگا کر سٹیرنگ متوازن رکھنا پڑرہا ہے. عرض کیا یہی وجہ ہے مستقل درد کی. کہ ایک تجربہ پہلے سے تھا. انہوں نے خاص دھیان نہ دیا.
کچھ عرصہ بعد اللہ نے پرانی جیپ کی جگہ بہتر گاڑی دیدی. درد غائب ہوگیا. ایک دن میں نے یاد دلایا. کہنے لگے تم ٹھیک کہتے تھے۔

جب میں آپ سے گذارش کرتا ہوں کہ ہر بات پر غور کریں کہ غور کرنے سے ہمارے اسی فیصد مسائل بغیر وسائل کے ہی حل ہوجائیں گے.. تو اس کے پیچھے ایسے ہی درجنوں واقعات کا تجربہ ہوتا ہے. سو جو کچھ ٹھیک ہورہا ہے اس پر بھی غور فرمائیں کہ اس میں کیسے بہتری لائی جا سکتی ہے. اور کچھ غلط ہورہا ہے اس پر تو اور بھی غور کریں. میرا یقین کریں بیشتر صورتوں میں حل بالکل آس پاس ہوتا ہے۔

About احمد سلیم ابن فاضل

View all posts by احمد سلیم ابن فاضل →

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *