واقعہ ختم نبوت : جس کا قلم خودلکھے گا وہ سچا ہوگا

جس کا قلم خودلکھے گا وہ سچا ہوگا واقعہ ختم نبوت
Spread the love

ختم نبوت کا منا ظرہ

1920میں سیفِ چشتیاں کتاب آنے کے بعد مرزا قادیانی نے تاجدارگولڑہ سےمقابلہ چیلنج کاکہا کہ میں عربی تفسیر بہت آچھی لکھتاہوں مجھ سے مقابلہ کریں جوزیادہ آچھا لکھے گا وہ سچا ہوگا تو آپؒ نے کہا ٹیھک ہے تو پھر مقرردن 25اگست کو تاجدار گولڑہ امیرملت جماعت علی شاہ صاحب اور سیکنڑوں علماءاورمشائخ بادشاہی مسجد پہنچ گئے اور مرزا کا انتظار کرنے لگئے پھر مرزا لاہور آیالیکن ان برزرگوں کے سامنے نہ آیا اور کہا کہ مجھے وہاں خطرہ ہے میں قتل کردیاجاٶں گااس لیے میں نہیں آسکتا۔

خاتم النبیین صلی اللہ علیہ وسلم کورس

جب اُس نے مقابلے کا کہا تھا تو آپؒ نے کہا کہ ہم خود تفسیر نہیں لکھیں گئے ہم کاغذ پر قلم رکھ دیں گئے جس کا قلم خودلکھے گا وہ سچا ہوگا لیکن وہ جھوٹا تھا نہ آیا اور اپنےنمائندے کو بھیجا کہ کوئی اور چیلنج کیا نمائندے نے کہ دیا کہ ہم تاجدارگولڑہ کو اور مرزا قادیانی کو کسی لنگڑے لولے کے پاس لے جاتے ہیں جس نےاُس کو ٹیھک کردیا وہ ہی سچاہوگا

انھوں نے سمجھا یہ بہت بڑا چیلنج ہے پیرصاصب یہ نہیں قبول کریں گئے اور بھاگ جائیں گئے لیکن جب تاجدار گولڑہ نے یہ سنا تو آپؒ جلال میں آگئے اور کہا کہ مہرعلی شاہ کو آج کسی لنگڑے کسی لولے کے پاس نہ لے کر جاٶ بلکے مجھے آج کسی مردےکی قبر پر لے جاٶ آج مہرعلی شاہؒ مردے کو بھی ذندہ کرکے خضورؐ کی ختم نبوت بیان کروا دے گا:

تاکہ قیامت تک کوئی ختم نبوتؐ کے خلاف نہ بولے

‎مہرمنیر پڑھ کردیکھو کچھ عرصے بعد کسی نے تاجدار گولڑہ سے پوچھاکہ آپؒ نے اتنا بڑا دعوایٰ کر دیا کہ آپؒ مردہ ذندہ کر لیں گئے تو تاجدارگولڑہ نے فرمایا کہ آج بات کس کی تھی آج مقابلہ کس کاتھا آج بات عزت رسول صلی اللہ علیہ والہ وسلم کی تھی آج حضور اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلم ؐ کی ختم نبوت کی بات تھی آپؒ نے فرمایاکہ رات کو مجھے رسولؐ کی زیارت ہوئی آپؐ نے فرمایا ہے ہےکہ مہرعلی کل ڈرنا مت تو جو کہے گا وہ ہو جائے گا اسلیے میں نے دعوایٰ کیا نہیں بلکہ مجھ سے کروایا گیا ہے

‎25 اگست کا دن بادشاہی مسجد کے درودیوار آج بھی تاجدار گولڑہ کی عظمت کو بیان کرتے ہیں امیر ملت جماعت علی شاہؒ کی عظمت کو بیان کرتے ہیں:

‎25اگست کا دن ہمیں یاد دلاتا ہے کہ ہمارے برزرگوں نے یہ بیعت لی کہ جیئں گے ختم نبوت کیلئے اور اگر کوئی ہمارے نبی کریم صلی اللہ علیہ والہ وسلم کے خلاف بولے ختم نبوت کے خلاف بولے تواپنی جان دےدیں گئے لیکن در حضور اکرم ؐ نہیں چھوڑے گے 26

 مئی کی رات امیر ملت پیر سید جماعت علی شاہ صاحب رحمۃ اللہ علیہ نے فرمایا تھا کہ آج وہ کذاب دجال رہیگا یا یہ فقیر….. پھر لوگوں نے دیکھا سنا برانڈ رتھ روڈ دوسری منزل پر مرزا قادیانی ہیضہ کی وبا کہ منہ سے پاخانہ دونوں اطراف سے کرتے ہوئے جہنم واصل ہوگیا۔۔لعنت اللہ علی الکاذبین…

‎میں آج اُن سب بھائیوں برزگوں دوستوں جو آج میڈیا میں ہیں کسی ادارے میں کام کرتے ییں یا وہ جو سب انڑنیٹ استعمال کرتے ہیں اُن کے ذریعے اپنا یہ پیغام پوری دنیا تک پہنچانا چاہتا ہوں کہ کس طرح ہمارے برزرگوں نے ختم نبوت بیان کی جسکی مثال قیامت تک نہیں ملے گئی اور آج لوگ جو ختم نبوت کے خلاف بول رہے ہیں جوجعلی نبوت بیان کر رہے ہیں اور ہم سب تماشادیکھ رہے ہیں

‎میں اپیل کرتا ہوں کہ ان کی روک تھام کے لیے کوشش کریں اور ان کوایسی سزائے دی جائیں تاکہ قیامت تک کوئی ختم نبوتؐ کے خلاف نہ بولے۔

‎دعاٶں کا طلبگار۔

اسلام کے بارے میں مزید پڑھیں

Aalmi Majlis Tahaffuz Khatm-e-Nubuwwat

http://www.khatm-e-nubuwwat.org/

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *