8 مضرِ صحت کام جو موت کی طرف لے جاتے ہیں

8 مضرِ صحت کام جو موت کی طرف لے جاتے ہیں
Spread the love

صحت مند رہنے کے لیے مزید پڑھیں

 ہم روزانہ لاتعداد چیزیں استعمال کرتے ہیں یا کئی ایسے کام کرتے ہیں جو ہمیں آسانی مہیا کرتے ہیں

لیکن ہم اس بات سے قطعی طور پر ناواقف ہوتے ہیں کہ بعض چیزیں وقتی طور پر تو آسانی تو فراہم کر رہی ہیں لیکن حقیقت میں ہمیں موت کے قریب لے جارہی ہیں-

جی ہاں آج ہم آپ کو چند ایسی ہی عام سی چیزوں کے بارے میں بتائیں گے جو صحت کو تباہ کرسکتی ہیں-

 پلاسٹک کی بوتلوں میں کھانا، پینا

اکثر پلاسٹک کی بوتلوں میں بڑی تعداد میں مائیکرو پلاسٹکس پائے جاتے ہیں جو کہ انسانی صحت کے لیے خطرہ ہوتے ہیں

یہ کسی بھی قسم کے ایسے پلاسٹک کے ٹکڑے ہوتے ہیں جو لمبائی میں 5 ملی میٹر سے بھی کم ہوتے ہیں-

یہ جسم میں موجود چربی میں اضافہ کرتے ہیں اور ساتھ اعصابی نظام اور قوت مدافعت پر منفی اثرات مرتب کرتے ہیں-

 ڈرائی کلین کپڑوں کا استعمال

ڈرائی کلینگ درحقیت ایک کیمیائی عمل ہے-

کپڑوں کو ڈرائی کلین کرتے وقت کئی خطرناک اور مضر صحت کیمیکل کا استعمال کیا جاتا ہے-

اور ان میں سے بعض کیمیکل کپڑوں میں ہی رہ جاتے ہیں-

یہ کیمیکل سانس کے ذریعے ہمارے جسم میں داخل ہوسکتے ہیں اور آنکھوں میں خارش یا سر درد اور سر چکرانے کا سبب بن سکتے ہیں-

چھینک روکنا

آپ کو کبھی بھی چھینک کو روکنا صحت کے لیے بہت نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔ چھینک کو روکنے کی کوشش ہر گز نہیں کرنی چاہیے کیونکہ اسے ہوا کا رخ کانوں کی جانب ہوسکتا ہے-

جس کے نتیجے میں آنکھوں یا ناک یا پھر کان میں موجود خون کی رگیں پھٹ سکتی ہیں۔

زہریلے مادوں پر مشتمل پرفیوم کا استعمال

متعدد پرفیوم ایسے ہوتے ہیں جو کہ زہریلے اور مضر صحت مادوں پر مشتمل ہوتے ہیں جبکہ کپمنیاں اس بات کو خفیہ رکھتی ہیں-

یہ مادے پٹرولیم سے حاصل کیے جاتے ہیں اور ہارمون میں عدم توازن پیدا کرنے کے علاوہ متلی اور الٹی کا سبب بن سکتے ہیں-

بدترین صورتحال میں یہ کینسر کا مریض بھی بنا سکتے ہیں-

پوپنگس یعنی دانوں کو نوچنا یا اکھاڑنا

سب سے پہلی بات تو یہ کہ دانوں کو نوچنا یا پھاڑنا ان کو خراب کر سکتا ہے یہاں تک کہ داغوں کا سبب بھی بن سکتا ہے-

چہرے کے دانوں کا براہ راست دماغ سے رابطہ ہوتا ہے اور پھنسیوں یا دانوں کے ساتھ یہ عمل انفیکشن کا باعث بن جاتا ہے-

یہ چیز صحت کے لیے اتنی خطرناک ہے کہ بینائی اور فالج سے متعلق پیچیدگیاں بھی پیدا کرسکتا ہے۔

مصنوعی اجزاء کے ساتھ کاسمیٹکس کا استعمال

یہ جاننا ضروری ہے کہ آپ جو میک اپ استعمال کررہے ہیں اس میں مصنوعی اجزاء شامل ہیں جو آپ کے لئے مضر صحت ہیں۔ اور بہت نقصان دہ ہوسکتے ہیں۔

یہ اجزاء وقت کے ساتھ آپ کے جسم میں جمع ہوسکتے ہیں اور جلد کی جلن اور یہاں تک کہ کینسر کا سبب بن سکتے ہیں۔

اپنا تکیہ یا سرہانہ نہ بدلنا

ہر رات جب آپ سوتے ہیں تو آپ کا تکیہ جلد، بالوں اور جسم کا تیل جذب کرتا ہے۔

یہ آپ کے تکیہ میں دھول کے ذرات کو پیدا کرسکتا ہے جو واقعی خراب الرجی کا سبب بن سکتا ہے۔

ناک کے بالوں کو اکھاڑنا

ناک سے بالوں کو کھینچنا جلد کی جلن اور سوجن کا سبب بن سکتا ہے۔

اگر آپ بالوں کو دور کرتے ہیں تو ، آپ اپنی صحت اوراپنا مدافعتی نظام بھی کمزور کردیں گے اور یہ ممکنہ طور پر دماغ کے دیگر انفیکشن کا سبب بن سکتا ہے۔

صحت مند رہنے کے لیے مزید پڑھیں

20 Foods That Are Bad for Your Health

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *