لومڑی اور فاختہ

لومڑی اور فاختہ
Spread the love

تحریر: اسحاق مزاری

پیارے بچو آج آپ لومڑی اور فاختہ کی کہانی سے لطف اندوز ہوں گے۔
ایک دفعہ کا زکر ہے کہ ایک جنگل میں ایک لومڑی رہتی تھی۔
لومڑی جنگل کے راستے سے گزر رہی تھی۔
جنگل کے راستے کیچڑ میں ایک فاختہ پھنسی ہوئی تھی۔
فاختہ نے لومڑی کو گزرتا دیکھ فاختہ کو ایک ترکیب سوجھی اور لومڑی کو کھانے کی دعوت دینے لگی۔

لومڑی کو بھی یہ بات پسند آگئی اور فاختہ کے قریب آگئی اور فاختہ کیچڑ سے نکال لیا۔
اور کھانے کے لیئے اپنے منہ کے قریب لے گئی اسی دوران فاختہ بولی کہ
“میرے جسم اور پروں پر کیچڑ لگا ہوا ہے کیا ایسے ہی مجھے کھاو گے یا مجھے اچھی طرح دھونے کے بعد کھاو گے”

یہ بھی پڑھیں: یہودی کا غلام کیسے جنت میں پہنچ گیا

لومڑی نے سوچا”
یار یہ بات تو صحیح کر رہی ہے کیوں نہ اسے اچھی طرح دھوکے پھر کھایا جائے۔
لومڑی نے فاختہ کو اچھی طرح دھو لیا۔
دھونے کے بعد کھانے کے لیئے پھر سے منہ کہ قریب لے گئی اسی دوران ایک بار پھر فاختہ بولی”
میرے پروں سے پانی ٹپک رہا ہے کیا ایسے پانی کے ساتھ مجھے کھاو گے یا اچھی طرح سوکھانے کے بعد۔

لومڑی اب بھی فاختہ کے چال میں آگئی۔
اور فاختہ کو سوکھنے کے لیئے دھوپ میں رکھ دیا اور انتظار میں تھی کہ کب یہ فاختہ خشک ہوگی اور میں اسے بیٹھ کر مزے سے کھاؤں گی۔
اسی دوران فاختہ اڑ گئی اور لومڑی دیکھتی رہ گئی۔

نتیجہ:- جو ملے سو بسم اللہ

یہ بھی پڑھیں: پُن پُن پانڈے کی ذہانت

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *